IQNA

8:24 - November 03, 2018
خبر کا کوڈ: 3505302
بین الاقوامی گروپ- عمران خان کی جانب سےمولانا سمیع الحق قتل کی شدید مذمت/ ایک اور حملے میں حمیدگل کا بیٹا بال بال بچ گیا۔

ایکنا نیوز- مولانا سمیع الحق پر راولپنڈی میں نجی ہاوسنگ سوسائٹی میں گھر کے اندر قاتلانہ حملہ کیا گیا، جس میں ان کی موت واقع ہوئی۔

 

نجی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے سابق سینیٹر مولانا سمیع الحق کے بیٹے حمیدالحق نے تصدیق کی کہ ان کے والد کو چھریوں کے وار کرکے قتل کیا گیا۔

 

رپورٹس کے مطابق جب مولانا سمیع الحق پر حملہ ہوا، وہ گھر میں اکیلے تھے۔

 

ان کے بیٹے کا کہنا تھا کہ ان کے محافظ، جو ان کے ڈرائیور بھی تھے، نے بتایا کہ وہ کچھ وقت کے لیے انہیں کمرے میں اکیلا چھوڑ کر باہر گئے اور جب وہ واپس آئے تو انہیں شدید زخمی حالت میں پایا۔

 

مولانا سمیع الحق کو زخمی حالت میں قریبی ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال منتقل کیا گیا، تاہم وہ ہسپتال پہنچنے سے قبل راستے میں ہی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوئے۔

 

خیال رہے کہ مولانا سمیع الحق مدرسہ اکوڑہ خٹک کے مہتمم تھے جبکہ وہ پاکستان کے ایوان بالا کے رکن بھی رہ چکے تھے۔

 

افغان طالبان سے مذاکرات میں ان کا کردار ہمیشہ اہم رہا ہے، کیونکہ افغان طالبان کے کئی رہنما ان کے شاگرد رہے تھے، اسی وجہ سے ان پر مولانا سمیع الحق کا بہت حد تک اثر مانا جاتا تھا۔

ڈان نیوز کے مطابق ایک اور واقعے میں انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) کے سابق سربراہ مرحوم جنرل حمید گل کے بیٹے عبداللہ گل پر اسلام آباد میں قاتلانہ حملہ ہوا ہے، تاہم وہ محفوظ رہے۔

 

رپورٹ کے مطابق عبداللہ گل کی جیپ پر اسلام آباد ایکسپریس وے پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کردی۔

 

وہ اسلام آباد سے راولپنڈی جارہے تھے کہ ان پر موٹر سائیکل سواروں نے فائرنگ کی تاہم وہ محفوظ رہے.واضح رہے کہ عبداللہ گل کے والد حمید گل مرحوم سے مولانا سمیع الحق مرحوم کے دیرینہ مراسم تھے۔

 

میڈیا رپورٹس کے مطابق مولانا سمیع الحق کی نماز جنازہ آج دوپہر 2 بجے ادا کی جائے گی۔

تجزیہ نگاروں کے مطابق واقعہ افغان کمانڈروں کے قتل کا ردعمل ہوسکتا ہے۔/

 

نام:
ایمیل:
* رایے: